Urdu Poetry, Love Shayari, Sad Poetry & Islamic Poetry

Category: Allama Iqbal

Find out the best Urdu shayari from our page, you will our new collection of the year for sure. We have every kind of shayari in which our latest collection is Allama Iqbal Poetry, Allama Iqbal Poetry in Urdu, and poetry of Allama Iqbal. You will get the best shayari to from the best poet, Mr. Iqbal has known to be the bestest poet of his times and till now. You will love his poetry and we have Urdu shayari with images as well. Click to get the latest shayari with easily download option. Get in touch with us.

Khuwab Mai Saari Rat Jannat

Khuwab Mai Saari Rat
خواب میں ساری رات جـــــنت کـی ســـــیر کرتارھا

“اقبــــــــال”

صـــبح آنکھ کھولی تو ســـر مــاں کے قـــدموں میں تها


Khuwab Mai Saari Rat Jannat ki Sair Krta Rha,

“IQBAL”
Subh Ankh Khuli too Sir Maa Kay Qadmoo Mai Tha.

Anokhi Waza Hai Saare Zamane Se

Anokhi Waza Hai


انوکھی وضع ہے سارے زمانے سے نرالے ہیں

یہ عاشق کونسی بستی کے یا رب رہنے والے ہیں


Anokhi Waza Hai Saare Zamane Se Nirale Hain,

Yeh Aashiq Konci Basti Ke Ya Rab Rehne Wale Hain

 

Read More: Love Poetry

Yeh Pairan Kalesa O Haram Ae Way Majbori


یہ پیران کلیسا و حرم اے وائے مجبوری


صلہ ان کی کد و کاوش کا ہے سینوں کی بے نوری


یقیں پیدا کر اے ناداں یقیں سے ہاتھ آتی ہے


وہ درویشی کہ جس کے سامنے جھکتی ہے فغفوری


کبھی حیرت کبھی مستی کبھی آہ سحرگاہی


بدلتا ہے ہزاروں رنگ میرا درد مہجوری


حد ادراک سے باہر ہیں باتیں عشق و مستی کی


سمجھ میں اس قدر آیا کہ دل کی موت ہے دوری


وہ اپنے حسن کی مستی سے ہیں مجبور پیدائی


آنکھوں کی بینائی میں ہیں اسباب مستوری


کوئی تقدیر کی منطق سمجھ سکتا نہیں ورنہ


نہ تھے ترکان عثمانی سے کم ترکان تیموری


فقیران حرم کے ہاتھ اقبالؔ آ گیا کیونکر


میسر میر و سلطاں کو نہیں شاہین کافوری

 

Read More: Wafa Poetry

Har Shae Musafir Har Cheez Raahi

Har Shae Musafir Har Cheez Raahi
ہر شے مسافر ہر چیز راہی


کیا چاند تارے کیا مرغ و ماہی


تو مرد میداں تو میر لشکر


نوری حضوری تیرے سپاہی


کچھ قدر اپنی تو نے نہ جانی


یہ بے سوادی یہ کم نگاہی


دنیائے دوں کی کب تک غلامی


یا راہبی کر یا پادشاہی


پیر حرم کو دیکھا ہے میں نے


کردار بے سوز گفتار واہی

Yeh Payam Day Gayi Hai Mujhe Bad Subh Gahi

Yeh Payam Day Gayi Hai Mujhe Bad Subh Gahi


یہ پیام دے گئی ہے مجھے باد صبح گاہی


کہ خودی کے عارفوں کا ہے مقام پادشاہی


تری زندگی اسی سے تری آبرو اسی سے


جو رہی خودی تو شاہی نہ رہی تو رو سیاہی


نہ دیا نشان منزل مجھے اے حکیم تو نے


مجھے کیا گلہ ہو تجھ سے تو نہ رہ نشیں نہ راہی


مرے حلقۂ سخن میں ابھی زیر تربیت ہیں


وہ گدا کہ جانتے ہیں رہ و رسم کج کلاہی


یہ معاملے ہیں نازک جو تری رضا ہو تو کر


کہ مجھے تو خوش نہ آیا یہ طریق خانقاہی


تو ہما کا ہے شکاری ابھی ابتدا ہے تیری


نہیں مصلحت سے خالی یہ جہان مرغ و ماہی


تو عرب ہو یا عجم ہو ترا لا الٰہ الا


لغت غریب جب تک ترا دل نہ دے گواہی

Jugno Ki Roshni Hai Kashana Chaman Main

Jugno Ki Roshni Hai Kashana Chaman Main


جگنو کی روشنی ہے کاشانۂ چمن میں


یا شمع جل رہی ہے پھولوں کی انجمن میں


آیا ہے آسماں سے اڑ کر کوئی ستارہ


یا جان پڑ گئی ہے مہتاب کی کرن میں


یا شب کی سلطنت میں دن کا سفیر آیا


غربت میں آ کے چمکا گمنام تھا وطن میں


تکمہ کوئی گرا ہے مہتاب کی قبا کا


ذرہ ہے یا نمایاں سورج کے پیرہن میں


حسن قدیم کی اک پوشیدہ یہ جھلک تھی


ے آئی جس کو قدرت خلوت سے انجمن میں


چھوٹے سے چاند میں ہے ظلمت بھی روشنی بھی


نکلا کبھی گہن سے آیا کبھی گہن میں

 

Read More: Jaun Elia Poetry

PoetrySad © 2018 Privacy Policy Disclaimer
Scroll Up